آپریشنل صلاحیت کا مظاہرہ کرنے کیلئے ہندوستان پہنچے امریکی F-18 لڑاکا طیارے

بحریہ اپنے مقامی طیارہ بردار بحری جہاز وکرانت کے لیے لڑاکا طیاروں کا بیڑا حاصل کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

آپریشنل صلاحیت کا مظاہرہ کرنے کیلئے ہندوستان پہنچے امریکی F-18 لڑاکا طیارے

 نئی دہلی۔24 مئی۔ (پی این این۔) دو بوئنگ F/A-18E سپر ہارنیٹ لڑاکا طیارے گوا میں ایک بحری تنصیب میں اپنی آپریشنل صلاحیت کا مظاہرہ کرنے کے لیے ہندوستان پہنچے ہیں۔ دراصل ہندوستانی بحریہ اپنے مقامی طیارہ بردار بحری جہاز وکرانت کے لیے لڑاکا طیاروں کا بیڑا حاصل کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ اس پیش قدمی سے واقف لوگوں نے کہا کہ ہوائی جہازوں کا مظاہرہ اس ہفتے گوا میں بحریہ کے ہوائی اسٹیشنآئی این ایس ہنسا میں ساحل پر مبنی ٹیسٹ سہولت سے شروع ہوگا۔انہوں نے کہا کہ فلائٹ ٹرائلز ایک ہفتے سے زائد عرصے تک جاری رہنے کی توقع ہے، انہوں نے مزید کہا کہ دو جیٹ طیارے 20 مئی کو ہندوستان پہنچے۔جنوری میں، ہندوستانی بحریہ نے رافیل میری ٹائم لڑاکا طیارے کے فلائٹ ٹرائل کیے تھے۔ہندوستانی بحریہ آئی اے سی وکرانت کے لیے لڑاکا طیاروں کی ایک کھیپ خریدنے کا منصوبہ رکھتی ہے جو اگست میں شروع ہونے کا امکان ہے۔چار سال پہلے، ہندوستانی بحریہ نے اپنے طیارہ بردار بحری جہاز کے لیے 57 ملٹی رول لڑاکا طیارے حاصل کرنے کا عمل شروع کیا تھا۔اس معاہدے کے لیے چار طیارے لائن میں تھے جن میں رافیل (ڈاسالٹ، فرانس)، ایف-18 سپر ہارنیٹ (بوئنگ، یو ایس(، MIG-29K روس اور گریپین (ساب، سویڈن) شامل تھے۔اس وقت ہندوستانی بحریہ اپنے واحد طیارہ بردار بحری جہاز آئی این ایسوکرمادتیہ سے روسی نڑاد MiG-29K لڑاکا طیاروں کو چلاتی ہے۔ڈیک پر مبنی لڑاکا طیاروں کی خریداری کے لیے بحریہ کی جانب سے جاری کردہ معلومات کے لیے درخواست میں یہ جاننے کی کوشش کی گئی کہ کمپنیاں کس سطح پر ٹیکنالوجی کی منتقلی ہندوستان کے ساتھ اشتراک کرنے کے لیے تیار ہیں۔