جہانگیر پوری تشدد: فائرنگ ایک ملزم سمیت 14 گرفتار

پولس نے اتوار کو شمال مغربی دہلی کے جہانگیر پوری میں ہنومان جینتی پر تشدد کے سلسلے میں فائرنگ کرنے والے سمیت 14 لوگوں کو گرفتار کیا

جہانگیر پوری تشدد: فائرنگ ایک ملزم سمیت 14 گرفتار

نئی دہلی، 17 اپریل(پی اےن اےن ) پولس نے اتوار کو شمال مغربی دہلی کے جہانگیر پوری میں ہنومان جینتی پر تشدد کے سلسلے میں فائرنگ کرنے والے سمیت 14 لوگوں کو گرفتار کیا ہے۔دہلی پولیس نے کہا کہ تشدد کے معاملے میں ایف آئی آر درج کر لی گئی ہے۔ ابتدائی تفتیش کے بعد 14 ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے اور باقی کی شناخت کی جا رہی ہے۔فائرنگ کرنے والے ایک شخص کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ تلاشی کے دوران اس کے پاس سے تشدد میں استعمال ہونے والا ایک پستول برآمد ہوا۔پولیس کا دعویٰ ہے کہ سخت حفاظتی نگرانی کے درمیان علاقے میں حالات قابو میں ہیں۔ سینئر پولیس افسران صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ اس واقعے میں 8 پولیس اہلکاروں سمیت کل 9 افراد زخمی ہوئے ہیں۔ زخمیوں کو بابو جگجیون رام اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ جہاں ان لوگوں کا علاج ہو رہا ہیں۔ اس واقعہ میں ایک سب انسپکٹر کو بھی گولی لگی ہے۔ جس کی حالت مستحکم ہے۔دہلی پولیس کمشنر نے کہا کہ اس معاملے میں ایف آئی آر درج کی گئی ہے، جس کی بنیاد پر دہلی پولیس معاملے کی جانچ کر رہی ہے۔ علاقے میں امن برقرار رکھنے کے لیے بڑی تعداد میں پولیس فورس تعینات کی گئی ہے۔ دہلی پولیس کمشنر راکیش استھانہ نے کہا کہ سینئر افسران کو زمین پر رہنے اور امن و امان کی صورتحال اور گشت پر کڑی نظر رکھنے کو کہا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ذمہ داران کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ پولیس کمشنر استھانہ نے شہریوں سے درخواست کی ہے کہ وہ سوشل میڈیا پر کسی بھی افواہ یا جعلی خبر پر دھیان نہ دیں۔ہفتہ کو ہنومان جینتی کے موقع پر نکالے گئے جلوس کے دوران دونوں فریق آمنے سامنے آگئے اور پتھرا¶ بھی ہوا۔ جن کی کچھ تصویریں منظر عام پر آئی ہیں۔ تصویریں اس وقت کی بتائی جا رہی ہیں جب جلوس اپنے آخری پڑا¶ پر تھا۔ تصویروں میں دیکھا جا سکتا ہے کہ جلوس کی ایک گاڑی پر مشتعل بھیڑ پھینک رہی ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ دو پولیس اہلکار پتھرا¶ کرنے والوں کے ہجوم کو روکنے کی کوشش کر رہے تھے لیکن وہ ناکام رہے۔