9نومبر سے فجر کی اذان کے خلاف مساجد کے باہر بھجن شروع کےا جائے گا‘ متالک کی دھمکی

9نومبر سے فجر کی اذان کے خلاف مساجد کے باہر بھجن شروع کےا جائے گا‘ متالک کی دھمکی

بنگلور( پی اےن اےن ) رام سےنا کالےڈر پرمود متالک نے حکومت سے کہاکہ رےاست مےں مساجد سے لاﺅڈ اسپےکر کے استعمال کے خلاف قدم اٹھائے۔ جو صبح پانچ بجے سے خلل پےدا کرتے ہےں۔ مسلمان بی جے پی کو ووٹ نہےں دےتے تو حکومت ان کی خوش آمد کےوں کرتی ہے۔ پرمود متالک نے دھمکی دی کہ اگر حکومت مساجد سے لاﺅڈ اسپےکر نہےں ہٹائے گی تو رام سےنا 9مئی کی صبح 5بجے سے مساجد کے باہر صبح کی اذان کے جواب مےں ہنومان چالسےہ۔ سوپر بھات اور بھجن شروع کرے گی۔ پر مود متالک نے مےڈےا کو بتاےا کہ اترپردےش کے وزےر اعلیٰ ےوگی نے مساجد مےں لاﺅڈ اسپےکر کے استعمال کے خلاف سخت قدم اٹھاےا ہے۔ اور سپر
ےم کورٹ کے آرڈر پر عمل درآمد شروع کےا ہے۔ کرناٹک کے وزےر اعلیٰ بومئی کو بھی چاہئے کہ وہ ےہاں بھی مساجد سے لاﺅڈ اسپےکر کے استعمال کے خلاف سخت اقدام اٹھائے ۔ انہوں نے کہاکہ ہم مساجد مےں عبادت کے خلاف نہےں ہےں لےکن آواز کے خلاف ہےں ۔ متالک کہتا ہے کہ اسلام امن پسند مذہب نہےں ہے۔ کےونکہ وہ دوسروں کےلئے مسائل کھڑے کرتاہے۔متالک کہتا ہے کہ اس نے تقرےباًاےک ہزار مندروں کے ذمہ داروں سے تبادلہ خےال کرکے صبح کی اذان کے بارے مےں بات کی ہے۔ اور تمام مندروں کے ذمہ داروں نے صبح کی اذان کے جواب مےں ہنومان چالسےہ اور بھجن شروع کرنے کی حماےت کی ہے۔ متالک نے مےسور پولےس سے مطالبہ کےا ہے کہ ان تمام لوگوں کو گرفتار کرے جو عےدالفطر کی وےڈےو بنا کر وائرل کررہے ہےں۔اس نے دھمکی دی ہے کہ اگر پولےس کاروائی نہےں کرتی تو ہمارے کارکن اےسے عناصر کے خلاف کاروائی کرےں گے۔متالک نے حکومت سے مطالبہ کےا کہ وہ منگلور مےں مسلم ڈےولپمنٹ فرنٹ کے کارکنوں کے بارے مےں جانچ کرے ۔ جو کرناٹک مےں طالبان جےسے مسائل کھڑے کرنے کی کوشش کررہے ہےں ۔ اس نے پاپولرفرنٹ آف انڈےا پر پابندی لگانے کا بھی مطالبہ کےا۔