کانگریس کو قیادت اوراجتماعی قوت ارادی کی ضرورت

کانگریس کے بااختیار ایکشن گروپ کے حصہ کے طور پر کانگریس پارٹی میں شامل ہونے کی پیشکش کو ٹھکرا دیا ہے

کانگریس کو قیادت اوراجتماعی قوت ارادی کی ضرورت

نئی دہلی26اپریل(آئی این ایس انڈیا) انتخابی پالیسی سازپرشانت کشور نے کانگریس میں شامل ہونے کی پیشکش کو مسترد کرتے ہوئے بات کی ہے۔ پرشانت کشور نے کہاہے کہ پارٹی کو گہرے تنظیمی مسائل سے نمٹنے کے لیے قیادت اور اجتماعی قوت ارادی کی ضرورت ہے۔ انتخابی پالیسی ساز پرشانت کشور کو کانگریس نے پارٹی کی بااختیار ایکشن کمیٹی میں شامل ہونے کی پیشکش کی تھی لیکن انہوں نے اسے ٹھکرا دیا۔ کانگریس اور پرشانت کشور کے درمیان پچھلے کچھ دنوں سے بات چیت چل رہی تھی۔ انتخابی پالیسی سازنے لوک سبھا انتخابات 2024 کے لیے کانگریس کو ایک بلیوپرنٹ بھی پیش کیا تھا اور بہت ساری اصلاحات کی تھیں۔ اس پیشکش پر کانگریس کے اندر بھی بحث ہوئی۔ انہوں نے کانگریس میں شامل ہونے کی خواہش کا اظہار بھی کیا تھا، حالانکہ کانگریس کے اندر کچھ لیڈروں کو پرشانت کشور کے دوسری پارٹیوں کے ساتھ کام کرنے کے بارے میں کچھ خدشہ بھی تھا۔ ایسے میں کانگریس کی جانب سے انہیں بااختیار ایکشن گروپ میں شامل کرنے کی تجویز پیش کرتے ہوئے پارٹی کے مشن 2024 کے لیے کام کرنے کی پیشکش کی گئی خبروں کے مطابق پرشانت کشور پوری آزادی کے ساتھ کانگریس میں کام کرنے کی آزادی چاہتے تھے۔ پرشانت کشور نے ٹویٹ کیا اور کہاہے کہ میں نے کانگریس کے بااختیار ایکشن گروپ کے حصہ کے طور پر کانگریس پارٹی میں شامل ہونے کی پیشکش کو ٹھکرا دیا ہے۔ ایک اور ٹویٹ میں پرشانت کشور نے کہاہے کہ میرے پاس ایک عاجزانہ مشورہ ہے کہ مجھ سے زیادہ پارٹی کو زیادہ گہرائی سے جڑے ہوئے ساختی مسائل اور بڑی اصلاحات کے لیے زیادہ قیادت اور اجتماعی قوت ارادی کی ضرورت ہے۔پرشانت کشور کانگریس میں شامل نہیں ہوں گے© :رندیپ سرجے والا:۔ انتخابی پالیسی سازپرشانت کشور کانگریس میں شامل نہیں ہوں گے، کانگریس کے ترجمان رندیپ سرجے والا نے منگل کو ٹویٹ کر کے بتایا۔ کانگریس صدر سونیا گاندھی نے انہیں پارٹی میں شامل ہونے کی دعوت دی تھی۔ پرشانت کشور کو کانگریس میں شامل کرنے پر تنازعہ پہلے ہی نظر آرہا تھا اور آج اس پر ابہام ختم ہوگیا ہے۔ تاہم انڈین پولیٹیکل ایکشن کمیٹی کی جانب سے تلنگانہ راشٹرا سمیتی کے ساتھ کیا گیا اتحاد بھی دونوں کے درمیان بات چیت کے ٹوٹنے کی ایک اہم وجہ سمجھا جاتا ہے۔ خبرکے مطابق۔ پرشانت کشور نے خوداعلان کیا ہے کہ وہ کانگریس میں شامل نہیں ہوں گے۔ تاہم انہوں نے اس کی کوئی فوری وجہ نہیں بتائی ہے۔ اطلاعات کے مطابق انتخابی پالیسی سازپرشانت کشورنے بااختیار ایکشن گروپ میں شامل ہونے کی کانگریس کی پیشکش کو ٹھکرا دیا ہے۔ یہ ورکنگ گروپ 2024 کے عام انتخابات کے پیش نظر سیاسی چیلنجز کا جائزہ لینے کے لیے تشکیل دیا گیا ہے۔ ذرائع نے اشارہ دیا ہے کہ پارٹی نے انہیں پارٹی کی بحالی کے لیے پوری آزادی کے ساتھ کام کرنے کی آزادی نہیں دی ہے۔