سی بی آئی کا چینی کمپنی کو فائدہ پہنچانے کے الزام میں کارتی چدمبرم پر شکنجہ

کمپنی پنجاب کے ضلع مانسا میں اپنی سائٹ پر زیادہ سے زیادہ چینی کارکنوں کو لانے کی کوشش کر رہی تھی

سی بی آئی کا چینی کمپنی کو فائدہ پہنچانے کے الزام میں کارتی چدمبرم پر شکنجہ

نئی دہلی ، 17 مئی (پی اےن اےن )سی بی آئی نے کارتی چدمبرم سمیت چھ لوگوں کے خلاف ایک چینی کمپنی کو حد سے زیادہ ویزا جاری کرنے کے لیے رشوت لینے کا معاملہ درج کیا ہے۔ اس کے لیے منگل کو دس مقامات پر تلاشی لی گئی۔مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) نے سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم کے بیٹے اور کانگریس کے رکن پارلیمنٹ کارتی چدمبرم سمیت پانچ ملزمان کے کئی مقامات پر چھاپے مارے۔ سی بی آئی نے چنئی اور ممبئی میں مقیم 5 ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے۔ ان پر الزام ہے کہ انہوں نے ایک پروجیکٹ کے لیے چینی ورکرز کو ویزہ دلانے کے لیے 50 لاکھ روپے رشوت لی تھی۔ خیال رہے کہ پنجاب کے شہر مانسا میں ایک نجی کمپنی میں 1980 میگاواٹ کا تھرمل پاور پلانٹ لگانے کا عمل جاری تھا اور پلانٹ کی تنصیب کا کام ایک چینی کمپنی کو آو¿ٹ سورس کر دیا گیا تھا۔ پراجیکٹ اپنے شیڈول سے پیچھے چل رہا تھا، اس لیے کمپنی پنجاب کے ضلع مانسا میں اپنی سائٹ پر زیادہ سے زیادہ چینی کارکنوں کو لانے کی کوشش کر رہی تھی تاکہ تاخیر پر تعزیری کارروائی سے بچا جا سکے۔ الزام لگایا گیا ہے کہ اس مقصد کے لیے کمپنی کے نمائندے نے اپنے قریبی ساتھی/فرنٹ مین کے ذریعے چنئی میں مقیم ایک شخص سے رابطہ کیا اور اس کے بعد اس نے 263 پروجیکٹ کے ویزے الاٹ کیے ۔ چینی کمپنی کے اہلکاروں کو دوبارہ استعمال کرنے کی اجازت دی گئی۔اس عمل میں مبینہ طور پر 50 لاکھ کی رشوت چنئی میں مقیم ایک شخص نے اپنے قریبی ساتھی کے ذریعے مانگی تھی، جو مانسا میں واقع اس نجی کمپنی نے ادا کی تھی۔ یہ ممبئی کی ایک کمپنی کے ذریعہ کنسلٹنسی کے لئے فرضی رسیدوں کی ادائیگی اور جیب سے باہر کے اخراجات کی شکل میں کیا گیا تھا۔ اس معاملے میں، چنئی، ممبئی، کوپل (کرناٹک)، جھارسوگوڑا (اڑیسہ)، مانسا (پنجاب) اور دہلی سمیت تقریباً 10 مقامات پر چھاپہ مارا گیا۔